حکومت کو ناکام کرنے کیلئے بیوروکریٹس کی سازشیں عروج پر پہنچ گئیں

اسلام آباد:
پاکستان کی بیوروکریسی کے دو بڑے گروپس میں شدید اختلافات پیدا ہو گئے ہیں اور موجودہ حکومت کے وژن کو آگے بڑھانے والے افسران کو ہٹا کر شریف برادران کی قریبی بیوروکریٹس نے انتظامی ڈھانچے پر قبضے کی عملی کوششوں کا آغاز کر دیا ہے۔
مستند ذرائع کے مطابق اس وقت مبینہ طور پر بیوروکریسی کے شریف برادران کے حمایت یافتہ گروپ کو یدایات سابق پرنسپل سیکریٹری فواد حسن فواد جیل بیٹھ کر کر رہے ہیں، جنہیں ان کے حامی افسران استاد اعظم کا نام دیتے ہیں، جب کہ ان کی ہدایات دیگر افسران تک پہنچانے اور موجودہ حکومت کو ڈی فیم کرنے کی کوششوں کے حوالے سے قیادت موجودہ سیکریٹری اسٹیبلشمنٹ ڈاکٹر اعجاز منیر کر رہے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ٍڈاکٹر اعجاز منیر جنہیں فواد حسن فواد کے شاگرد خاص کا مقام حاصل ہے اپنے استاد اعظم فواد حسن فواد سے دوران حراست آف دی ریکارڈ طویل ملاقاتیں بھی کر چُکے ہیں۔
شریف برادران کے حمایت یافتہ استاد اعظم فواد حسن فواد نہ صرف اپنے شاگرد بیوروکریٹس کو جیل سے شاگرد خاص ڈاکٹر اعجاز منیر کے ذریعے شاگردوں کو ہدایات جاری کر رہے ہیں جس میں حکومت کو ڈی فیم کرنے کے ساتھ سب سے بڑے ٹارگٹ یعنی پرنسپل سیکرٹری ٹو پرائم منسٹر کے عہدے پر شاگرد خاص ڈاکٹر اعجاز منیر کو تعینات کروانا ہے۔
ذرائع کا کہنا ہے کہ گذشتہ چند ہفتوں میں استاد اعظم گروپ نے متعدد کامیابیاں حاصل کی ہیں جن میں سرفہرست جواد رفیق ملک کو تعینات کروانے میں کامیابی حاصل کی۔
نتیجتاً پنجاب میں استاد اعظم فواد حسن فواد کی شاگرد بیوروکریسی نے پنجاب میں لاکھوں کرونا مریضوں سے متعلقہ رپورٹس لیک کیں اور ہر رپورٹ وزیراعظم اور وزیراعلیٰ سے پہلے شہباز شریف تک پہنچنے لگی ۔
ادھر دوسرا گروپ جو اس وقت حکومت کے قریب ہے پرنسپل سیکریٹری ٹو پی ایم اعظم خان جنہیں بیوروکریسی خان اعظم کے نام سے پکارتی ہے کی زیرقیادت تحریک انصاف کی حکومت کے وژن کے تحت کام کر رہا یے، اور استاد اعظم فواد حسن فواد کا گروپ یوسف نسیم کھوکھر کو چیف سیکریٹری پنجاب کے عہدے سے ہٹوانے کے بعد اب سب سے بڑے ٹارگٹ یعنی دوسرے گروپ کے سربراہ خان اعظم، اعظم خان کی سب سے بڑی وکٹ گرا کر یہاں شاگرد خاص ڈاکٹر اعجاز منیر کو تعینات کرانا چاہتے ہیں تاکہ پنجاب کے وزیراعلیٰ کے بعد وزیراعظم کو بھی مفلوج کیا جا سکے اور حکومت عوامی حلقوں میں مکمل ڈی فیم ہو سکے۔۔۔ اس سلسلے میں شاگرد خاص ڈاکٹر اعجاز منیر جو کہ سیکرٹری اسٹیبلشمنٹ ہیں نے استاد اعظم کے شاگردوں کو وفاق اور پنجاب کے اہم عہدوں پر تعینات کرنا شروع کر رکھا ہے تاکہ اگر وہ خان اعظم، اعظم خان کو گرا پائیں اور خود پرنسپل سیکریٹری بنیں تو بیوروکریسی ان کی مکمل گرفت میں ہو۔۔

About ویب ڈیسک

Check Also

چیف کمشنر کو اثاثہ جات ڈکلیئر کرنے کا حکم

اسلام آباد() اسٹیبلشمنٹ ڈویژن نے سروس جوائن کرنے سے اب تک اپنے اثاثہ جات ڈکلیئر …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے