ضلع راجن پور کے صحافیوں کا حکومتی اداروں کی کوریج کا بیکاٹ کا اعلان

(رپورٹ کائنات ملک ) شعبہ صحافت کو ملک کا چوتھا ستون کہا جاتا ہے اور صحافی کو اس معاشرے کی انکھ اور زبان سمجھا جاتا ہے معاشرے میں جہاں جہاں ظلم و۔زیادتی ناانصافی کا بازار گرم ہو وہاں پر اس کمزور طبقہ کی نمائندگی کرتے ہوے اس کی آواز بن کر ایوان اقتدار کی خاموش گھنٹیوں کو بجا کر ان کو جاگانا اپنا فرض اولین سمجھتا ہے صحافی خود کو دن رات خطرے میں ڈال کر بریکنگ نیوز بناتا ہے اندھی ہو یاطوفان سیلاب ہو یا جنگ کا میدان ۔صحافی خود خطرے میں رہے کر لمحہ بہ لمحہ تازہ ترین صورتحال سے عوام کو آگاہی فراہم کرتا ہے یہی صحافی دوسرے لوگوں کی حق کی بات کرتا ہے اس کے لیے لڑتا ہے مرتا ہے دوسروں کے لیے دشمنیاں تک مول لے لیتا ہے یہی صحافی جب دوران فرض کی ادائیگی اگر زخمی ہوتا ہے ۔ معذور ہوتا ہے شہید ہوتا ہے ۔یا میڈیا مالکان جب چاہیے اسے ایک نوٹس پر کئی سالوں کی محنت دیکھے بغیر اسے ادارے سے فارغ کردیتے ہیں ادارے سے نکال باہر کردیتے ہیں تب وہ بےبسی کی تصویر لیے خود ایک بریکنگ نیوز بن جاتا ہے معزوری ۔ذخمی شہید ہونے یا معاشی قتل پر اسے کبھی کسی ادارے یا حکومت کی طرف سے کوئی سرپرستی حاصل نہیں ہوتی اسے کوئی ادارہ سیکورٹی نہیں دیتا کوئی ادارہ اسے لائف انشورنس فراہم نہیں کرتا دوان کام جہاں انہیں مختلف مافیا ۔کرپشن ذردہ اداروں سیاسی وڑیروں کی مخالفت کا سامنا رہتا ہے وہاں بیوروکریسی مقامی انتظامیہ کے ناروا سلوک کا اے روز سامنا رہتا ہے اس سلسلے میں اے روز مقامی انتظامیہ صحافیوں کو ان کی نااہلی اور کرپشن کی کوریج سے روکنے کے لیے ان پر جھوٹی ایف ائی ار کراتی رہتی ہے اس سلسلے میں مقامی وضلعی انتظامیہ کے ناروا سلوک کے خلاف ضلع راجن پور کے تمام صحافیوں نے احتجاجی مظاہرہ کیا ضلع راجن پور تحصیل جام پور تحصیل روجھان سمیت ضلع بھر میں فیلڈ میں کام کرنے والے ورکنگ صحافیوں نے انتظامیہ حکومت اور محکمہ اطلاعات کی طرف سے کروانا وائرس کے حوالے سے پیدا شدہ معاشی سرگرمیوں پر ان کو کوئی ریلیف پیکج نہ دینے کے خلاف اور صحافی برادری کو مسلسل نظر انداز کرنے فیلڈ میں کام کرنے والے ورکنگ صحافیوں کے ساتھ جارحانہ رویہ اختیار کرنے صحافیوں کی معاشی اور سیکیورٹی کے مسائل کوحل نہ کرنے کے خلاف احتجاج کیا یہ احتجاج پریس کلب جام پور۔پریس راجن پور میں کیا گیا دوران احتجاج۔۔ ۔زندہ ہیں صحافی زندہ ہیں۔کے فلک شگاف نعرے بھی لگاے گئے اورآئیندہ کا لائحہ عمل بیانیہ بنانے پر مکمل اتفاق واتحاد بھی کیا گیا
اس موقع پرحکومت انتظامیہ کی زیادتیوں اور صحافیوں کے پیکج نظر انداز کرنے پر فیلڈ کے ورکنگ صحافیوں کا اظہار مذمت جلد ہی بڑے لائحہ عمل بنانے اور تحریک شروع کرنے کا اعلان حکومتی و انتظامیہ کی سرگرمیوں اور ان کے تمام پروگرامز کی کوریج کا بائیکاٹ کا اعلان کردیا ہے۔۔۔۔۔۔۔۔

About ویب ڈیسک

Check Also

تباہی پھیلانے والا پانی اب خوشحالی لائے گا ۔۔

راجن پورپنجاب کا آخری ضلع ہے اور پاکستان کے جنوب مغربی حصے میں واقع ہے۔ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے