عوامی مرکز میں‌ آگ لگنے سے کون کا ریکارڈ جلا، حقیقت سامنے آگئی

اسلام آباد کے ریڈ زون میں واقع عوامی مرکز میں لگنے والی آگ کے بعد سوشل میڈیا پر یہ خبریں گردش کرنے لگی تھیں کہ سی پیک منصوبے کا اہم ریکارڈ جل گیا ہے۔ اس حوالے سے یہ بحث بھی شروع ہوئی کہ کہیں یہ آگ لگائی تو نہیں گئی تاکہ ریکارڈ ضائع ہو جائے۔ اس حوالے سے سوشل میڈیا پر لاہور میں ایل ڈی اے پلازہ اور موٹر وے، میٹرو اور کراچی میں اہم ریکارڈ جلنے کا حوالہ بھی دے رہے ہیں تاہم اب ترجمان دفتر خارجہ نفیس زکریا نے عوامی مرکز میں ریکارڈ جلنے کی خبروں کی وضاحت کر دی ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ پلاننگ، ڈویلپمنٹ اور ریفارمر ڈویژن کے مطابق اسلام آباد کے عوامی مرکز میں لگنے والی آگ کے نتیجے میں سی پیک کا کسی بھی قسم کا کوئی بھی ریکارڈ نہیں جلا اور اس کے حوالے سے چلنے والی تمام خبریں بالکل بے بنیاد ہیں۔ سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ٹوئٹ کرتے ہوئے ترجمان دفتر خارجہ نفیس زکریا نے اسلام آباد کے عوامی مرکز میں ہونے والی آتشزدگی کے دوران سی پیک کے ریکارڈ جلنے کی خبروں کی سختی سے تردید کی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ پلاننگ ، ڈویلپمنٹ اور ریفارمز ڈویژن کے مطابق عوامی مرکز کی آتشزدگی میں سی پیک کا کوئی بھی ریکارڈ نہیں جلا، آتشزدگی میں ایک چھوٹے ریسرچ یونٹ کو نقصان پہنچا ہے جس کا تمام ریکارڈ ڈیجیٹل اور سوفٹ ویئر میں تھا اور وہ مکمل طور پر محفوظ ہے۔
دوسری جانب یہ تحقیقات بھی جاری ہیں کہ آگ لگنے کی اصل وجہ کیا تھی جس کے مزید حقائق منظر عام پر آئیں گے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں