بلیو وہیل گیم کھیلنے والے پانچ افراد کیخلاف تحقیقات

لاہور: انٹرپول کی نشاندہی پر لاہور میں بلیو وہیل گیم کھیلنے والے چار لڑکوں اور ایک خاتون کے خلاف تحقیقات جاری ہیں۔ کم عمر رہائشی ملزمان نے اپنے ایک ساتھی کو ہاتھ پاؤں باندھ کر کار میں ڈالا اور اسے خود کو رہا کرنے کا ٹاسک دیا، واقعے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کرنے پر کم عمر ملزمان پکڑے گئے ہیں۔ ابتدائی تفتیش کے مطابق لاہور کے علاقے جوہر ٹاؤن کے 14 سالہ رہائشی سلمان شہزاد نے اپنی والدہ نوشین شہزاد کے موبائل فون پر ویڈیو بنا کر اپ لوڈ کی، اس کے دوست حسنین، حمزہ اور عثمان بھی اس گیم میں شریک تھے۔

گیم کے دوران کم عمر ملزمان نے اپنے ساتھی حسنین کے ہاتھ پاؤں باندھے، منہ پر ٹیپ لگائی، اور اس کے اغواء کا ڈرامہ رچا کر ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل کردی۔ اس پر ایف بی آئی حرکت میں آئی اور انٹرپول واشنگٹن کے توسط سےکارروائی کے لیے حکومت پاکستان کو خط لکھ دیا۔ ایف آئی اے نے ملزمان کو حراست میں لیا اور تمام ملزمان کی عمریں 15 سال سے کم تھیں۔ ایف آئی اے کا کہنا ہے کہ ملزمان کی عمریں 15 سال سے کم ہیں اس لئے ان کی گرفتاری کے لئے ڈی جی ایف آئی اے سے خصوصی اجازت لی جائے گی. جب کہ ایف آئی اے نے تمام ملزموں کو والدین سمیت طلب کرلیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں