عدالتی محاذ: کیا ن لیگ ذہنی طور پر شکست تسلیم کرچکی؟

احتساب عدالت میں نواز شریف اور ان کے بچوں کے خلاف نیب ریفرنسز کی کارروائی جاری ہے۔ اس کارروائی میں آغاز میں مسلم لیگ ن کے رہنماؤں میں جو جوش و خروش پایا جاتا تھا وہ آئے روز کم ہوتا جارہا ہے۔ یوں محسوس ہوتا ہے کہ ن لیگ کی قیادت اور کارکن عدالتی جنگ میں ذہنی طور شکست تسلیم کر چکے ہیں، یہی وجہ ہے کہ زیادہ تر رہنما اب بیان بازی سے میڈیا اور عوام کو مطمئن کرنے کی کوشش میں لگ گئے ہیں۔ احتساب عدالت میں مریم نواز اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کی پیشی کے موقع پر وفاقی وزیر دانیال عزیز کا کہنا تھا کہ جہانگیر ترین اور عمران خان واحد سیاستدان ہیں جنہوں نے اپنے ہاتھ سے لکھ کردیا ہے کہ انہوں نے چوری کی ہے۔

دانیال عزیز کا کہنا تھا کہ وہ اور ان کے رہنما عدالتوں میں پیش ہوتے رہے ہیں لیکن ایک جماعت کے سربراہ الیکشن کمیشن اور انسداد دہشتگردی عدالت کے مفرور ہیں۔ جہانگیر ترین اور عمران خان واحد سیاستدان ہیں جنہوں نے اپنے ہاتھ سے لکھ کردیا ہے کہ انہوں نے چوری کی ، اثاثے چھپائے اور ٹیکس ادا نہیں کیا۔ انہوں نے کہا کہ یہ کبھی پارلیمنٹ کا گھیراﺅ کرتے ہیں تو کبھی ٹی وی کی نشریات بند کرتے ہیں، یہ تمام سیاسی جماعتوں کو نیچا دکھانے کی کوشش کرتے ہیں۔ دریں اثناء سابق وزیر اعظم کے داماد کیپٹن ریٹائرڈ صفدر جب احتساب عدالت میں پیشی کیلئے آئے تو صحافیوں نے ان سے سوال کیا کہ ’نواز شریف عدالت میں کب پیش ہوں گے؟‘ ۔ صحافیوں کے اس سوال پر کیپٹن ریٹائرڈ صفدر نے مختصر جواب دیتے ہوئے کہا ’یہ آپ نواز شریف سے پوچھیں‘۔ یہ مختصر جواب سن کر صحافی حیران رہ گئے۔

دوسری جانب احتساب عدالت میں مریم نواز اور کیپٹن صفدر کی پیشی،سکیورٹی اہلکاروں نے طارق فاطمی اور ان کی اہلیہ کوجوڈیشل کمپلیکس میں داخلے سے روک دیا،میڈیا رپورٹس کے مطابق احتساب عدالت کی جانب سے 50 افراد کو احاطہ عدالت میں داخل ہونے کی اجازت دی گئی اور ان افراد کی فہرست سکیورٹی اہلکاروں کو فراہم کر دی گئی ہے،آج احتساب عدالت میں مریم نواز اور کیپٹن صفدر کی پیشی ہوئی تو سیکیورٹی اہلکاروں نے احتساب عدالت کے گیٹ پر طارق فاطمی اور ان کی اہلیہ کو روک دیاجبکہ ایم این ایز زیب جعفر ، شکیلہ لقمان اور فرحانہ قمر کو بھی فہرست میں نام نہ ہونے پر روک دیا گیا۔ بعد ازاں ن لیگی اراکین اسمبلی اور کارکنوں نے جوڈیشل کیمپلیکس سے تھوڑی دور دھرنا دیا اور نعرے بازی بھی کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں