حکومت اورفوج میں کوئی تفریق نہیں، احسن اقبال

نیویارک: وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال نے کہا ہے کہ میں نے بیان کسی کادل دکھانے کےلئے نہیں دیا. حکومت اورفوج میں کوئی تفریق نہیں،جوغلط فہمیاں پیداکرناچاہتے ہیں اورہروقت تیلیاں لگانے کوتیاررہتے ہیں انھیں مایوسی ہوگی،عمران خان فوج،عدلیہ اورحکومت میں غلط فہمی پیداکرنے کی کوشش کررہے ہیں، وفاقی وزیر داخلہ نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ فوجی ترجمان کی وضاحت آگئی ہے تومعاملہ ختم ہوگیا،جواب الجواب دینامناسب نہیں،میں نے کسی کادل دکھانے کی بات نہیں کی تھی،جوبات کہی تھی وہ بحیثیت جمہوری کارکن دل دکھنے پرکہی تھی،جذبات سے کھیلنے کے بجائے یکجہتی کامظاہرہ کرناچاہئے
احسن اقبال کا کہنا تھا کہ قوم اورسپاہیوں کے جذبات کی قدرکرتاہوں مگرہمارے بھی جذبات ہیں،اداروں کے درمیان ہم آہنگی کی ضرورت ہے،فوجی ترجمان کی جانب سے وضاحت آگئی ہے تومل کرکام کرناہوگا۔ وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ حکومت ردالفسادکیلئے پیٹ کاٹ کرپیسے دے رہی ہے اور فوج ردالفسادمیں اچھاکام کررہی ہے اورقربانیاں دے رہی ہے،ان کا کہنا تھا کہ کشتی کاایک سوار اپنا چپو چھوڑ کردوسرے کاچپوچلائے تومعاملہ خراب ہوتاہے،سب ایک ہی کشتی میں سوارہیں،مل کرکوشش کریں گے تومنزل پرپہنچیں گے،ورلڈبینک کی میٹنگ میں مثبت بات کررہاتھا،کہاگیاآپ کچھ کہہ رہے ہیں اورفوجی ترجمان کچھ.
وزیر داخلہ احسن اقبال نے کہا کہ سب پاکستانی گلدستے کی طرح ہیں،مختلف رنگ خوبصورتی ہیں،نسل یازبان کی تفریق کریں گے توپاکستان کوتقسیم کردیں گے،وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ عوام میڈیانہیں ہماری کارکردگی دیکھ کرفیصلہ کریں گے،مایوسی پھیلانے والے سقراط اوربقراط ملک دشمن ہیں،احسن اقبال نے کہا کہ سی پیک کومتنازع بنانے کے بجائے مسئلہ کشمیرحل کرایاجائے،امیدہے امریکامسئلہ کشمیرکومتنازعہ تسلیم کرکے حل کرنے کی کوشش کرے گا،دنیاپاکستان کوپرامیداورعزت کی نگاہ سے دیکھ رہی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں