معروف تجزیہ کار نے چودھری نثار کو آئینہ دکھادیا

اسلام آباد: مسلم لیگ ن کے صدر نواز شریف کی جانب سے عدالت کے ساتھ محاذ آرائی کے حوالے سے سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار کا بیان حقیقت پر مبنی نہیں۔ سینئر صحافی اور تجزیہ کار مصطفیٰ بیگ نے ایک نجی آن لائن چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ چوہدری نثار علی خان نے کوئٹہ میں وکلا کے معاملے پر کمیشن کی طرف سے وزارت داخلہ کو ذمہ دار قرار دیا تو چوہدری نثار اسے برداشت نہ کرسکے اور شدید غم و غصے کا اظہار کیا۔ تو کیا چوہدری نثار کے اس عمل کو اداروں سے محاذ آرائی قرار دینا چاہئے۔ مصطفیٰ بیگ نے کہا کہ نواز شریف عدالتی فیصلے پر اپنے تحفظات کا اظہار کر رہے ہیں جو کسی بھی فریق کا حق ہوتا ہے۔ اس وقت چوہدری نثار کے اپنی قیادت کو مشورے دیتے وقت اپنا ماضی بھی یاد رکھنا چاہئے۔(ویڈیو دیکھئے)

پاکستان کی سیکورٹی فورسز کی طرف سے مغوی کینڈین خاندان کی بازیابی پر بات کرتے ہوئے مصطفیٰ بیگ نے کہا کہ امریکی صدر نے اس معاملے پر انتہائی غیر سنجیدہ رویہ اپنایا۔ ضرورت تو اس امر کی تھی امریکا کی طرف سے پاکستان کے اس اقدام کو سراہا جاتا لیکن ٹرمپ نے جب یہ کہا کہ پاکستان نے امریکا کی طرف سے ڈو مور کے مطالبے پر عمل شروع کر دیا ہے تو اس سے ان کی غیر سنجیدہ سوچ کی عکاسی ہوئی۔ امریکا کو خطے میں امن کیلئے اپنا کردار ادا کرنا چاہئے ناکہ تعلقات خراب کرنے کے بیان دینے چاہئیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں