ملک سے وفاداری کا معیار سب کیلئے ایک ہونا چاہئے، سعد رفیق

اسلام آباد: مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے ایک بار پھر دھماکا خیز گفتگو کی ہے۔ انہوں نے نہ صرف انصاف کے دعویداروں کو تنقید کا نشانہ بنایا بلکہ ڈھکے چھپے الفاظ میں حساس اداروں پر بھی بات کی۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق عوامی ایکسپریس کی تزئین وآرائش کے افتتاح کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ آئی ایس آئی اور را کے سابق سربراہان کی ملاقات کی تصاویر میں نے بھی دیکھیں ہیں۔ اگر یہ کام سیاستدان کرے تو الزام لگتا ہے کہ یہ پاکستان کا وفا دار نہیں۔ انہوں نے کہا کہ ریٹائرڈ جنرل احسان نے را کے سابق سربراہ سے ملاقات کی لیکن اس سے ان کی پاکستانیت پر کوئی فرق نہیں پڑتا۔ ہمیں نہ تو کسی فوجی افسر اور نہ ہی کسی سیاستدان کی حب الوطنی پرشک کرنا چاہیے۔

وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا ہے کہ آصف علی زرداری نیب کیسز سے بری ہو گئے اور نواز شریف کو پھنسا یا جا رہا ہے ،یہ قیامت کے آثار ہیں ،معیشت کے پہیے کو روکنے کے ذمے دار وہ لوگ ہیں جو سیاسی انتقام میں اندھے ہو کر دوسروں پر کیچڑ اچھالتے ہیں اور جھوٹ بولتے ہیں ،سیاسی اداکاروں کے ساتھ غیر سیاسی اداکار مل گئے اور وزیر اعظم کو بغیر وجہ کے تذلیل کر کے نکالا گیا ،جب اس طرح کی سازشیں کی جائیں تو غیر ملکی اور ملکی سرمایہ کار ڈر جاتے ہیں اور وہ مارکیٹ سے اپنا پیسہ نکال لیتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ایک وزیر اعظم کو تنخواہ نہ لینے پر نکال دیا جاتا ہے ،نواز شریف کے خلاف فیصلے پر بولیں تو کہا جاتا ہے کہ ہم حملہ آور ہیں ،ہمیں کم از کم بولنے سے مت روکا جائے۔

وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے محکمہ ریلوے پر بات کرتے ہوئے کہا کہ عوامی ایکسپریس جدید بنانے کے اخراجات ریلوے نے آمدنی سے کیے۔ ریلوے کی آمدنی میں 10گنا اضافہ ہوا ہے۔ مارچ میں خیبر میل کو اپ گریڈ کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ریلوے کی زمینوں پر قابض موٹے مرغوں نے سٹے لیا ہوا ہے۔ پشاور کے فراڈیے نے ریلوے کی ساڑھے دس ایکڑ زمین قبضے میں لے رکھی ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں