سیالکوٹ سے ریاض جانیوالی پرواز کو اتارنے اصل وجہ سامنے آگئی

لاہور : صبح سویرے پاکستان کے متعدد نجی ٹی وی چینلز پر یہ خبر نشر کی گئی کہ سیالکوٹ سے ریاض جانے والی پی آئی اے کی پرواز پی کے 755 کا انجن فیل ہوگیا ہے اور اس کے کارگو سیکشن میں آگ لگ گئی ہے۔ ابتدائی طور پر بتایا گیا کہ طیارے کو لاہور ایئر پورٹ پر ہنگامی طور پر اتار لیا گیا اور اس میں سوار تین سو سے زائد مسافروں کو بحفاظت اتار لیا گیا جبکہ فائربریگیڈ کی گاڑیاں آگے بجانے میں مصروف ہیں۔ چینلز پر یہ خبر سنتے ہی شہریوں میں تشویش کی لہر دوڑ گئی۔ یہ تمام خبریں ایئر پورٹ ذرائع سے نشر کی جارہی تھیں۔ زیادہ تر چینلز یہی خبر نشر کر رہے تھے کہ پی ئی اے کی سیالکورٹ سے ریاض جانے والا طیارہ حادثے سے بال بال بچ گیا، طیارے کا ایک انجن فیل جبکہ کارگو سیکشن میں آگ بھڑک اٹھی جس کی وجہ سے طیارے کو لاہور ائرپورٹ پر اتار لیا گیا۔

کچھ دیر بعد ترجمان پی آئی اے کی جانب سے اس حوالے سے وضاحت سامنے آگئی اور ترجمان پی آئی اے نے اصل صورت حال سے آگاہ کیا۔ ترجمان نے بتایا کہ طیارے میں آگ نہیں لگی بلکہ پائلٹ نے کاکپٹ میں دھویں کی نشاندہی کی تھی جس پر طیارے کو فوری طور پر لاہور ایئرپورٹ پر اتار لیا گیا۔ یوں طیارے میں آگ لگنے کی خبریں دم توڑ گئیں۔ پی آئی اے کے ترجمان نے بتایا کہ مسافر طیارے میں تین سو بیس افراد سوار تھے۔ ہنگامی لینڈنگ کے بعد تمام مسافروں کو لانج میں بحفاظت منتقل کر دیا گیا ہے۔ جبکہ ٹیکنیکل ٹیم نے طیارے کی جانچ پڑتال کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں