وفاقی وزیر اور کئی ن لیگی ارکان کا حکومت کے خلاف احتجاج

اسلام آباد : قومی اسمبلی کے اہم اجلاس میں وفاقی وزیر سمیت 2درجن سے زائد لیگی اراکین اسمبلی نے اپنی ہی حکومت کے خلاف واک آوٹ کردیا ۔قومی اسمبلی میں وفاقی وزیر بین الصوبائی ہم آہنگی ریاض پیرزادہ سمیت دو درجن ن لیگی اراکین نے اپنی ہی حکومت کے خلاف واک آوٹ کردیا ۔تفصیل کے مطابق قومی اسمبلی کے اجلاس میں خطاب کے دوران ریاض پیرزادہ نے اراکین پارلیمنٹ کے دہشت گردوں سے تعلق جوڑے جانے پر شدید احتجاج کیا ۔ان کا کہنا تھا کہ ہمیں دہشت گرد بنا دیا گیا ،میرا معزز گھراناہے لوگ ہمیں پیغامات بھیج رہے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ میں آئی بی کو نہیں مانتا اور نہ ہی نیو ز چینل سے لڑ سکتا ہوں ،ا گر میں دہشت گرد ہوں تو مجھے وزیر کیوں بنا یا گیا۔انہوں نے کہا کہ آئی بھی کی جانب سے جاری ہونے والا خط وزیراعظم ہاوس کی جانب سے جاری کیا گیا ۔اس سلسلے میں اسحاق ڈار یا کوئی سینئر وزیر آکر وضاحت دے کر اس طرح کی معلومات آئی بی سے کس کے کہنے پر دی۔اپنے تقریر کے بعد ریاض پیرازادہ نے قومی اسمبلی سے احتجاجاً واک آوٹ کیا تو ان کے ساتھ دیگر اراکین اسمبلی نے بھی واک آوٹ کیا جس پر حکومت کو سبکی کا سامنا کرنا پڑا ۔واضح رہے کہ نجی چینل نے دعویٰ کیا تھا کہ آئی بی کی جانب سے 37 لیگی رکن پارلیمنٹ کی فہرست جاری کی گئی جن کا تعلق کالعدم جماعتوں سے تھا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں