پاکستان میں سیاسی عدم استحکام بارے امریکی وزیر خارجہ سے متفق ہیں، فواد چوہدری

اسلام آباد : تحریک انصاف کے رہنما فواد چودھری نے ایک بار پھر ملک میں نئے انتخابات کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم امریکا کی ہر بات سے اختلاف کر سکتے ہیں لیکن امریکی وزیر خارجہ کے بیان کہ ”پاکستان میں سیاسی عدم استحکام ہے“ سے مکمل اتفاق کرتے ہیں۔
سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فواد چودھری نے کہا کہ اس وقت پاکستان میں کوئی حکومت نہیں ہے، سٹاک مارکیٹس گراوٹ کا شکار اور غیر ملکی سرمایہ کاری رکی ہوئی ہے اور وزیر خزانہ کرپشن میں عدالتوں کا سامنا کر رہے ہیں لیکن وہ مستعفی ہونے کو تیار نہیں،فواد چودھری نے کہا کہ ملک کے وزیر خارجہ پر بھی ہائیکورٹ میں کیس چل رہا ہے کہ وہ اقامہ ہولڈر ہیں اور اب وزیر داخلہ کیخلاف بھی کیس فائل کر دیا گیا کہ وہ بھی سعودی عرب میں اقامہ ہولڈر رہے ہیں۔

تحریک انصاف کے رہنما کا کہنا تھا کہ ان حالات میں عمران خان کے موقف کو تقویت ملتی ہے کہ ملک میں نئے انتخابات ہونے چاہئیں اور ایک مستحکم حکومت کا قیام عمل میں لایا جائے،فواد چودھری نے کہا کہ حکمران کہتے ہیں کہ قومی ادارے ان کیخلاف سازش کر رہے ہیں،اگر فوج اور عدلیہ ان کیخلاف سازشیں کر رہے ہیں تو پھر یہ حکومت کیسے کریں گے ،انہوں نے کہا کہ حکمرانوں کو امریکی بیان کو سنجیدہ لینے کی ضرورت ہے اور عالمی رائے عامہ میں پائی جانے والی تشویش کو دور کرنے کیلئے ملک میں عام انتخابات کرائے جائیں۔پی ٹی آئی رہنما کا کہنا تھا کہ عمران خان کے پاس کبھی کوئی عہدہ نہیں رہا،چیئرمین پی ٹی آئی کیخلاف جعلی مقدمہ بنادیاگیا،امید ہے عمران خان اورجہانگیرترین کیخلاف درخواستیں خارج ہوں گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں