ابوظہبی ٹیسٹ کا انتہائی ڈرامائی اختتام، ناقابل یقین رزلٹ

سری لنکا نے پاکستان کو ابو ظہبی ٹیسٹ میں 21 رنز سے شکست دے کر تین میچوں کی سیریز میں ایک، صفر کی سبقت حاصل کرلی ہے۔ ابوظہبی کے شیخ زید اسٹیڈیم میں کھیلے جانے والے ٹیسٹ کے آخری روز مہمان سری لنکا نے پاکستان کو جیت کے لئے 136 رنز کا ہدف دیا تاہم آسان ہدف کے تعاقب میں پاکستانی بیٹنگ لڑکھڑا گئی۔ گزشتہ 20 سالوں میں یہ پہلا موقع ہے جب پاکستان 150 سے کم ہدف کے تعاقب میں ناکام رہا۔ آخری مرتبہ 1997 میں فیصل آباد کے مقام پر گرین شرٹس جنوبی افریقہ کے 146 رنز کے جواب میں 92 رنز پر ڈھیر ہوگئے تھے۔

ہدف کے تعاقب میں قومی ٹیم کے اوپنر سری لنکن بولنگ کا سامنا نہ کرسکے ، شان مسعود 7 اور سمیع اسلم صرف 2 رنز بنا کر پویلین لوٹ گئے۔ اوپنرز کے بعد آنے والے بلے بازوں نے بھی ’تو چل میں آیا‘ کی لائن پکڑے رکھی اور اظہر علی کھاتا کھولے بنا ہی لکمل کا شکار ہوگئے جب کہ پریرا نے بابر اعظم کو 3 رنز پر چلتا کردیا۔

36 رنز کے مجموعی اسکور پر اسد شفیق 20 نرز بناکر ہیراتھ کی گیند پر کیچ آؤٹ ہوگئے۔ چائے کے وقفے کے بعد کپتان سرفراز احمد بھی 19 رنز کے انفرادی اسکور پر پویلین لوٹ گئے۔ حارث سہیل نے سری لنکن بولرز کے سامنے کچھ مزاحمت کی تاہم وہ بھی 34 رنز کے انفرادی اسکور پر پویلین لوٹ گئے۔ پاکستانی اختتامی بلے باز پہلی اننگز کی طرح کارکردگی دکھانے میں ناکام رہے اور پاکستان کی اننگز 114 پر اختتام پذیر ہوگئی۔

رنگنہ ہیراتھ نے ایک مرتبہ پھر پاکستانی بلے بازوں کو مشکل میں ڈالا اور 6 وکٹیں حاصل کیں جبکہ دلروان پریرا تین اور سرنگا لکمل ایک وکٹ کے ساتھ نمایاں رہے۔ ہیراتھ کو شاندار بولنگ کرنے پر میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔ اس سے قبل یاسر شاہ نے شاندار بولنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے 5 کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھائی جب کہ محمد عباس نے 2، حسن علی، اسد شفیق اور حارث سہیل نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔

سری لنکا کی جانب سے وکٹ کیپر بلے باز نروشن ڈکویل 40 رنز ناٹ آؤٹ کے ساتھ نمایاں رہے جب کہ کشال سلوا 25، کشال مینڈس 18 اور سرنگا لکمل 13 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔مہمان ٹیم کے 6 بلے باز ڈبل فیگر میں بھی شامل نہ ہوسکے۔

ٹیسٹ کے آخری روز کھیل کا آغاز ہوا تو مہمان ٹیم نے 69 رنز 4 کھلاڑی آؤٹ سے دوبارہ اننگز کا آغاز کیا لیکن محمد عباس اور یاسر شاہ نے شاندار بولنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے پہلے ہی سیشن میں تمام کھلاڑیوں کو پویلین بھیج دیا۔ 73 کے مجموعی اسکور پر مینڈس 18 اور سرنگا لکمل 86 کے مجموعے پر 13 رنز بنا کر محمد عباس کا شکار بنے۔ مہمان ٹیم کا اسکور 101 تک پہنچا تو یاسر شاہ نے ایک ہی اوور میں 2 کھلاڑیوں کو پویلین بھیج کر سری لنکن ٹیم کی بیٹنگ لائن کی کمر توڑ دی، دلرووان پریرا 6 اور رنگنہ ہیراتھ کوئی رنز نہ بناسکے۔ آٹھویں وکٹ پر ڈکویل اور سنداکن نے 34 رنز جوڑے اور ٹیم کا مجموعی اسکور 135 تک پہنچا تو سنداکن 8 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے جب کہ آخری آؤٹ ہونے والے بلے باز فرننڈو تھے جنہیں حسن علی نے بولڈ کیا، بلے باز ڈکویل 40 رنز کے ساتھ ناٹ آؤٹ رہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں