پی سی بی اینٹی کرپشن ٹریبونل نےاسپاٹ فکسنگ کیس کافیصلہ سنادیا

لاہور: پاکستان کرکٹ بورڈ کے اینٹی کرپشن ٹریبونل نے اسپاٹ فکسنگ کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے خالد لطیف پر پانچ سال کی پابندی اور دس لاکھ روپے جرمانے کی سزا سنائی ہے. خالد لطیف پر کوڈ آف کنڈکٹ کی پانچ شقوں‌کی خلاف ورزی کا الزام بھی تھا. فیصلہ سنانے کے وقت خالد لطیف غیر حاضر تھے.
کرکٹ کرپشن کیس میں پی سی بی اینٹی کرپشن ٹربیونل نے کرکٹر خالد لطیف پر پانچ سال کی پابندی عائد کرتے ہوئے ان پر 10 لاکھ روپے کا جرمانہ بھی عائد کیا ہے۔
تفصیلات کے مطابق پی سی بی اینٹی کرپشن ٹربیونل نے کرکٹر خالد لطیف کے کیس کا مختصر فیصلہ جاری کردیا ہے ، پی سی بی کی جانب سے بکی سے رابطہ کرنے پر پانچ سال پابندی اور 10 لاکھ روپے کا جرمانہ عائد کیا گیا ہے۔ فیصلے میں کہا گیا ہے کہ معلومات ہونے کے باوجود خالد لطیف نے بکی سے رابطہ کیا اور اس رابطے کے بارے میں پی سی بی اینٹی کرپشن ٹربیونل کو آگاہ بھی نہیں کیا اور انہوں نے دوسرے لڑکوں کو بھی بکی سے ملاقات کیلئے اکسایا۔
واضح رہے کہ شرجیل خان کے مقابلے میں خالد لطیف کو ڈھائی سال زیادہ کی سزا دی گئی ہے، دونوں کھلاڑیوں کی سزا کا اطلاق فروری 2017 سے ہوگا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں